اہم خبریں پاکستان

تحریک لبیک کیخلاف کریک ڈاؤن،چھاپے،سعد رضوی سمیت متعدد رہنما گرفتار

Written by admin

ایشیانیوز پوائنٹ ! مرکزی امیر تحریک لبیک پاکستان حافظ محمد سعد حسین رضوی سمیت متعدد رہنماؤں کو گرفتارکرلیا گیا۔ کا کہنا ہے کہ حافظ محمد سعد حسین رضوی کو ایلیٹ فور کے دستوں گرفتار کیا ہے۔عینی شاہدین کے مطابق سربراہ تحریک لبیک سیاسی و تاجر رہنما رانا اختر کا جنازہ پڑھانے کیلئے لاہور میں موجود تھے۔حافظ سعد حسین رضوی کو وحدت روڈ پر جاتے ہوئے سکیم موڑ چوک سے گرفتار کیا گیا۔

دوسری جانب پولیس نےراولپنڈی میں تحریک لبیک کے مرکز جامعہ محمدیہ غوثیہ پر چھاپہ مار کرمرکز سے علامہ محمد فیاض قریشی کو گرفتار کر لیا گیا۔ واضح رہے کہ تحریک لبیک پاکستان نے فرانس کے سفیر کی ملک بدری اور فرانسیسی مصنوعات کے بائیکاٹ کے معاملے پر 20 اپریل کو ناموس رسالتﷺ مارچ کا اعلان کر رکھا تھا۔ تحریک لبیک پاکستان نے مارچ کا فیصلہ مرکزی شوری کے اجلاس میں کیا، 21 رکنی مرکزی مجلس شوریٰ نے اتفاق رائے سے فیصؒہ کیا کہ ناموس رسالت مارچ کا آغاز 20 اپریل کی رات مولانا خادم حسین رضوی کی آخری آرام گاہ پر فاتحہ خوانی سے ہوگا۔ٹی ایل پی کے سربراہ سعد حسین رضوی نے کہا کہ حکومت نے علامہ خادم حسین رضوی کے ساتھ 16 نومبر 2020 کو معاہدہ کیا تھا

جس کے مطابق 3 ماہ میں گستاخ فرانسیسی سفیر ملک بدر اور فرانس کامکمل بائیکاٹ کرنا تھا لیکن تکمیل معاہدے کے لئے 20 اپریل تک کی مزید مہلت لی گئی۔ معاہدے کی ڈیڈ لائن کا اعلان وزیراعظم پاکستان نے خود میڈیا پر کیا، اب اگر 20 اپریل تک فرانس کا سفیر نہ نکلا تو ناموسِ رسالت مارچ ہو گا، 20 اپریل رات 12 بج کر 1 منٹ پر علامہ خادم حسین رضوی کے مزار سے مارچ کا آغاز ہو گا، اہلیان پاکستان تمام وابستگیوں سے بالاتر ہو کر ناموس رسالت مارچ کا حصہ بنیں۔دوسری طرف حکومت تحریک لبیک کے ساتھ کیے گئے معاہدے کو قرارداد کی شکل میں اسمبلی میں پیش کرنے کی تیاری کررہی ہے۔چند روز قبل وزیراعظم عمران خان نے وفاقی وزیر مذہبی امور پیرنورالحق قادری سمیت دیگر وزرا سے ملاقات میں ہدایت کی تھی کہ فرانس کے سفیرکوملک بدر کرنے اور مصنوعات کے بائیکاٹ بارے تحریک لبیک سے طے پانے والے معاہدے کو قرارداد کی شکل میں اسمبلی کے سامنے رکھے۔

About the author

admin

Leave a Comment